2015

جان ہے تو جہان ہے

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
”جان ہے تو جہان ہے “
حکیم محمد اشفاق
زندگی میں انسان اسی طرح بہت سی چیزوں کو خود پر نشے کی حد تک طاری کر لیتے ہیں۔ کہ ان چیزوں کے بغیر چلنا تو درکنار کبھی کبھار سانس لینا بھی دشوار لگنے لگتا ہے۔ صرف ایک سگریٹ ہی نشے کی لت نہیں کہ جس کا شکار ہونے پر انسان کو اس کے بغیر جینا ناممکن لگنے لگے بلکہ آج کے انسانوں کو تو انٹرینٹ کے بغیر بھی بالکل ویسای ہی بے چینی محسوس ہونے لگتی ہے جس طرح کی بے زاری انسان کو پسندیدہ چیز ناملنے پر ہونے لگتی ہے۔ انسان کو آج زندگی میں تبدیلیوں کی از حد ضرورت ہے تاکہ انسان کی زندگی کا صحت مندانہ سلسلہ جاری و ساری رہ سکے۔
1: آج ہم پانی کو پیتے تو ہیں مگر اس طرح نہیں اور اتنا نہیں جتنا کہ پینے کی ضرورت ہوتی ہے۔ ہر کوئی اس انتظار میں رہتا ہے کہ کب شدید پیاس سے نڈھال ہو جائیں تب جا کر پی کر آئیں۔
Read more ...

دعا کی قوت

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
دعا کی قوت
انعم چودھری
ایک حدیث پاک میں ارشاد ہے کہ الدعا ھو العبادۃ کہ دعا کرناعبادت ہے اور ایک دوسری حدیث میں ہے کہ الدعا مخ العبادۃ دعا ہی عبادت ہے۔ دعامانگنا جس کو آگیا اس نے دنیا و آخرت حاصل کر لی۔ دعا مومن کا ہتھیار ہے۔ اس لیے شریعت کا مزاج ہے کہ انسان کو ہر موڑ پر دعا کی تلقین کی گئی ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے ہمیں اس بات کا احساس ہو جائے کہ اللہ تعالیٰ ہماری دعائیں سنتے بھی ہیں اور اپنی رحمت سے قبول بھی فرماتے ہیں۔ تاریخ میں ایک واقعہ لکھا ہے کہ
حضرت بو علی سینا ایک بہت مشہور حکیم گزرے ہیں۔ حکمت کے ساتھ ساتھ وہ اپنے مریض پر روحانی توجہ بھی ضرور دیتے۔ ان کے ہزارہا مریضوں کو یقین تھا کہ علاج میں دوا سے زیادہ ان کی دعا کارگر ہوتی ہے۔ ان کی یہ شہرت بادشاہ وقت تک بھی پہنچ چکی تھی۔
Read more ...

اور…… کایا پلٹ گئی

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
اور…… کایا پلٹ گئی!!
اہلیہ مفتی شبیر احمد حنفی
حضرت مالک بن دینار رحمۃ اللہ علیہ سے ان کی توبہ کا سبب پوچھا گیا تو انہوں نے کہا۔
میں ایک سپاہی تھا اور شراب کا رسیا تھا۔ میں نے ایک نفیس باندی خریدی اور وہ میرے دل میں خاص مقام کی مالک بن گئی۔ اس سے میری ایک بچی پیدا ہوئی۔میں اس بچی کو حد سے زیادہ پیار کرتا تھا. جب وہ زمین پر گھسٹ کر چلنے لگی تو میرے دل میں اس کی محبت اور بڑھ گئی۔وہ مجھ سے مانوس ہو گئی اور میں اس کے سامنے جب شراب لا کر رکھتا تو وہ آکر کھینچا تانی کر کے میرے کپڑوں پر شراب بہا دیتی جب اس کی عمر دو سال ہو گئی تو وہ مر گئی میرے دل کو اس کے غم نے بیمار کردیا۔
پندرہ رمضان کو جمعہ کی رات میں شراب کے نشے میں مدہوش تھا میں نے عشاء کی نماز بھی نہیں پڑھی تھی میں نے خواب میں دیکھا
Read more ...

شیطان کا پھندہ

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
شیطان کا پھندہ
محمد عقیل
علامہ ابن جوزی چھٹی صدی ہجری کےایک مشہور عالم ، واعظ اور مصنف ہیں۔ آپ نے اپنی مشہور زمانہ کتاب تلبیس ابلیس میں شیطان کے پھندوں کا ذکر کیا ہے کہ کس طرح شیطا ن انسان پر حملہ آور ہوتا اور اسے راہ راست سے ہٹا دیتا ہے۔
اسی کتاب میں انہوں نے ایک واقعہ بیان کیا ہے جس کا خلاصہ یہ ہے کہ کسی جگہ پر ایک بہت عابد اور زاہد شخص رہا کرتا تھا۔ وہ ہمہ وقت عبادت میں مشغول رہتا اور دنیاوی کاموں سے کوئی رغبت نہ رکھتا تھا۔ ایک دن اس کے محلے کا ایک شخص اس کے پا س آیا اور اس سے کہا کہ و ہ اس کی بہن کھانے پینے کا ذمہ لے لے کیونکہ کچھ دنوں کے لئے وہ شہر سے باہر جارہا ہے۔ اس عابد نے حامی بھرلی۔
اب ہوتا یوں کہ ہر روز وہ لڑکی اس زاہد کے معبد میں کھانے کے وقت آتی اور دروازہ کھٹکھٹاتی۔ عابد دروازے کی اوٹ ہی سے اسے وہ کھانا دے دیتا۔ یہ سلسلہ چلتا رہا۔
Read more ...

گلزار جلتے ہیں

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
گلزار جلتے ہیں!!
عائشہ عبداللہ
جس کسی نے گلاب جیسے نرم و نازک مہکتے ہوئے ننھے ننھے اپنے ہی خون میں ڈوبتے ہوئے سراپے نہیں دیکھے، وہ ضرور دیکھیں اخبارات میں، ٹی وی میں انٹرنیٹ پر نظر آ رہے ہیں کسی کے غنچہ جیسے دہن کھلے رہ گئے ہیں، کتنے سیمیں بدن بکھرے پڑے ہیں، کسی نے مضبوطی سے آنکھیں بند کر لی ہیں جنہوں نے ہمیشہ پیار، دلار دیکھا اور بوسوں کی بارش دیکھی وہ آگ اور لوہے کی بارش نہیں دیکھ سکتے تھے سو سختی سے آنکھیں میچ لیں۔ کسی کی حیرت زدہ آنکھیں کھلی رہ گئی ہیں اور پاس کوئی نہیں جوان پر ہاتھ رکھ کر بند کر دے۔
ایک ہی اسٹریچر پر پانچ بچے آپس میں گڈ مڈ جیسے چھوٹے سے کمرے میں بہت سارے بھائی بہن ایک ہی دری پر سو جاتے ہیں صبح ہونے تک کسی کے پاؤں کسی کے سر پر اور کسی کا گھٹنا کسی کے پیٹ پر اور ماں باپ یہ دیکھ کر محبت سے مسکراتے ہیں
Read more ...