2012

مسئلے

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive

">مسئلے

ڈاکٹر منصور احمد باجوہ

کوئی مسئلہ مشکل نہیں ہو تا بشرطیکہ کسی اور کو پیش آرہا ہو۔

ہماری زندگی ہمیشہ ہمارے لیے مسائل کھڑے کرتی ہے اور ہمارے موت دوسروں کے لیے۔

مسئلوں کا حل صرف یہی ہے کہ ان کے ساتھ پر امن بقائے باہمی کا سمجھوتا کر لیا جائے۔
Read more ...

حصول علم اور مشکلات

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
حصول علم اور مشکلات
ام رومیثہ،لاہور
ارباب بصیرت کے ہاں یہ بات مسلم ہے کہ ہر پسندیدہ چیز کو حاصل کرنے کے لیے اس سے کم حیثیت چیز کو چھوڑنا پڑتا ہے۔
علم اعلی درجہ کا محبوب ہے اسے حاصل کرنے کے لیے مال، وقت ،احباب کی قربانی دیے بغیر حاصل کرنا ممکن نہیں۔امام یحیی بن کثیر نے فرمایا کہ جسم کی راحت کے ساتھ علم حاصل کرنے کی استطاعت نہیں ہوتی۔
امام محمد بن سحنون کی ایک لونڈی تھی امام صاحب ایک دن ان کے گھر تشریف لائے دیر تک کتاب کی تصنیف وتالیف میں مشغول رہے
Read more ...

امام اعظم ابو حنیفہ رحمہ اللہ سیمینار

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
امام اعظم ابو حنیفہ رحمہ اللہ سیمینار
رپورٹ؛ مولانا محمد کلیم اللہ
اتحاد اہل السنۃ والجماعۃ لاہور ڈویژن کے زیر اہتمام مورخہ 11دسمبر کو لاہور کے ایک مقامی ہوٹل میں امام اعظم ابوحنیفہ نعمان بن ثابت سیمنیار کا انعقاد کیا گیا جس میں ملک بھر کی عظیم علمی مذہبی اور روحانی شخصیات نے شرکت کی۔
Read more ...

توہم پرستی اور ماہ صفر

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
توہم پرستی اور ماہ صفر
مفتی محمد رضوان
آج پھر مسلمانوں میں اسلامی تعلیمات کی کمی اور مشرکوں وغیر مذہبوں کے ساتھ رہنے سہنے کی وجہ سے بعض ایسے خیالات پیدا ہو گئے ہیں جن کا دین وشریعت سے دور کا بھی واسطہ نہیں اس کے نتیجے میں آج بھی زمانہ جا ہلیت کے ساتھ ملتی جلتی مختلف توہم پرستیاں ماہ صفر کے بارے میں پائی جاتی ہیں۔
تیرہ تیزی اور ماہ صفر:
Read more ...

ہم اور ہمارا معاشرہ

User Rating: 0 / 5

Star InactiveStar InactiveStar InactiveStar InactiveStar Inactive
ہم اور ہمارا معاشرہ
مفتی محمد عنایت اللہ ،مقبوضہ جموں کشمیر
آج ساری دنیا میں نماز روزہ زکوٰة اور دیگر احکام اسلام کی اشاعت اور پابندی کے لئے اللہ کے کچھ بندے کوشاں بھی ہیں اور عامل بھی مگر اس کے باوجود امت کے اندر ایک بڑا طبقہ وہ بھی ہے جو یہ سب کچھ جانتے ہوئے بھی دین سے نہ صرف دور بلکہ کافی حد تک بیزار نظر آتا ہے۔ امت کا طبقہ وہ بھی ہے جس نے صرف عقائد اور عبادت کو دین سمجھ لیا اور اپنے نجات اسی میں منحصر سمجھی اور ایک طبقہ نے ایک قدم اور آگے رکھ کر معاملات کو بھی اس میں ملا لیا ،پھر کچھ لوگوں نے اخلاقیات کی اصلاح بھی ضروری سمجھی۔ مگر ایک جز ایسا ہے جو اگر یہ کہا جائے کہ ان سب کو عملی جامہ پہنانے کی بنیاد ہے تو شاید جھوٹ نہ ہوگا
Read more ...